ویسٹ انڈین کے کھلاڑیوں میں کورونا کیسز سامنے آنے کے بعد پاکستان اور ویسٹ انڈیز کے درمیان ون ڈے سیریز جون 2022 تک ملتوی ہوگئی ہے،
جس کے بعد  ویسٹ انڈیز کے کھلاڑی آج میچ کے بعد روانہ ہوگئے ہیں، جن کھلاڑیوں کا کورونا مثبت آیا وہ اور آفیشلز قرنطینہ مکمل کرنے کے بعد وطن روانہ ہوں گے جبکہ
پی سی بی حکام کو مطابق پلیئرز کو خدشہ تھا کہ مزید ٹیسٹ آئےتو کرسمس پر گھر نہیں جاسکیں گے۔
پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیف آپریٹنگ آفیسر سلمان نصیر نے اس حوالے سے پریس بریفنگ میں بتایا ہے کہ پچھلا ایک ہفتہ کافی مشکل رہا ،
خاص طور پر پچھلے 24 گھنٹے کافی مشکل تھے، دونوں بورڈز مسلسل رابطےمیں تھے، تین ویسٹ انڈین پلیئرز کا ٹی ٹوئنٹی سیریز سے پہلے کورونا ٹیسٹ مثبت آیا تھا،
کل رات مزید کھلاڑیوں اور سپورٹ اسٹاف کا مثبت ٹیسٹ آیا، ایک پلیئر زخمی تھا، ویسٹ انڈیز کے اپنےپلیئرز پریشان تھے ، ٹیم سٹرینتھ بھی متاثر ہوئی تھی،
سلمان نصیر نے بتایا ہےکہ ویسٹ انڈیز کا مؤقف تھا کہ وہ ون ڈے کیلئے 11 کھلاڑی نہیں کر سکتا، جون کے پہلے ہفتے میں ان میچز کو ری شیڈول کریں گے مشکل حالات ہیں،
کووڈ ایک حقیقت ہے، اس کی وجہ سے اسپورٹس پر کافی اثر پڑ رہا ہے، بائیو سکیور ببل کی کوئی خلاف ورزی نہیں ہوئی، یہ کہنا مشکل ہے کہ
ویسٹ انڈین کھلاڑیوں کو کہاں سے کورونا وائرس لگا، حالات سے لگ رہا ہے کہ شاید دبئی میں ٹرانسٹ کے دوران پلیئرز کو کووڈ لگ گیا،
کووڈ کے حوالے سے ہمارے پروٹوکول طے تھے۔ انہوں نے کہا کہ ویسٹ انڈیز سے اضافی تین ٹی ٹوئنٹی کھیلنے پر بھی بات کی ہوئی،
میڈیکل ٹیم کے ساتھ مشاورت کے بعد آج کا میچ جاری رکھنے کا فیصلہ کیا، گراؤنڈ پر اوپن ایریا میں ویسٹ انڈین پلیئرز سے پاکستانی پلیئرز کو وائرس لگنے کے امکانات کم تھے۔
کرکٹ ویسٹ انڈیز ہمارے ازالے کیلئے آئندہ تین اضافی ٹی ٹوئنٹی کھیلے گا، ہمارے دورہ نیوزی لینڈ ملتوی ہونے اور آج کی صورتحال میں کافی زیادہ فرق ہے،
سیریز کے پروٹوکولز دونوں ملکوں کے میڈیکل بورڈز مل کر طے کرتے ہیں، یہ سکیورٹی کا مسئلہ نہیں تھا کہ اس کی وجہ سے دوسری ٹیموں کے دوروں پر فرق آئے ، آسٹریلوی ٹیم کےدورے پر اس معاملہ کا کوئی اثر نہیں ہوگا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں